Home

یہاں ایک تفصیلی تفہیم ہے کہ کس طرح تقویٰ مومنوں کو فضیلت کی پیروی کرنے کی ترغیب دیتا ہے:
 • روحانی فضیلت: تقویٰ مومنوں کو اپنے روحانی سفر میں اللہ کے ساتھ اپنے تعلق کو گہرا کرنے اور زیادہ تقویٰ اور عقیدت کے لیے کوشش کرنے کی ترغیب دیتا ہے۔  تقویٰ کے حامل افراد اپنی مذہبی ذمہ داریوں کو پورا کرنے کے لیے پرعزم ہیں، جیسے کہ نماز، روزہ، صدقہ دینا، اور عبادات میں خلوص اور تندہی کے ساتھ مشغول ہونا۔  وہ مسلسل روحانی ترقی اور خود کی بہتری کے مواقع تلاش کرتے ہیں، ایمان کے اعلیٰ درجات اور اللہ سے قربت حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔
 • اخلاقی فضیلت: تقویٰ مومنین کو اپنی زندگی کے تمام پہلوؤں میں اخلاقی اقدار اور اخلاقی اصولوں کو برقرار رکھنے کی ترغیب دیتا ہے۔  تقویٰ کے حامل افراد دوسروں کے ساتھ اپنی بات چیت میں ایمانداری، دیانتداری، رحمدلی اور ہمدردی کا مظاہرہ کرتے ہیں، اپنی کمیونٹی کے لیے مثالی رول ماڈل بننے کی کوشش کرتے ہیں۔  وہ اخلاقی طرز عمل کے اعلیٰ ترین معیارات پر کاربند رہتے ہیں، یہاں تک کہ مشکلات یا آزمائش کے باوجود، یہ جانتے ہوئے کہ دیانتداری حقیقی تقویٰ کی علامت ہے۔
 • فکری فضیلت: تقویٰ کے حامل مومنین علم اور حکمت کو اللہ کے قریب کرنے اور زندگی میں اپنے مقصد کو پورا کرنے کے ذریعہ کے طور پر تلاش کرتے ہیں۔  وہ زندگی بھر سیکھنے، تنقیدی سوچ اور فکری تحقیقات میں مشغول رہتے ہیں، ایسے علم کو حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں جو اپنے اور دوسروں کے لیے فائدہ مند ہو۔  وہ عاجزی اور کھلے ذہن کے ساتھ تعلیم سے رجوع کرتے ہیں، یہ تسلیم کرتے ہوئے کہ حقیقی حکمت اللہ کی طرف سے آتی ہے اور ہدایت اور روشن خیالی کا ذریعہ ہے۔
 • پیشہ ورانہ فضیلت: تقویٰ مومنین کو ان کے منتخب کردہ شعبوں اور پیشوں میں کمال حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہوئے اپنی پیشہ ورانہ کوششوں میں سبقت حاصل کرنے کی ترغیب دیتا ہے۔  چاہے کاروبار، تعلیمی، صحت کی دیکھ بھال، یا کسی دوسرے پیشے میں، تقویٰ کے حامل افراد اپنے کام میں پیشہ ورانہ مہارت، قابلیت اور لگن کا مظاہرہ کرتے ہیں۔  وہ اخلاقی معیارات اور انصاف، دیانتداری اور سماجی ذمہ داری کے اصولوں پر عمل پیرا ہیں، معاشرے پر مثبت اثر ڈالنے اور مثبت تبدیلی کے ایجنٹ کے طور پر کام کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔
 • ذاتی فضیلت: تقویٰ مومنین کو ان کی ذاتی ترقی اور کردار میں فضیلت پیدا کرنے کی ترغیب دیتا ہے۔  تقویٰ کے حامل افراد عاجزی، صبر، شکرگزاری، لچک اور ضبط نفس جیسی خصوصیات پیدا کرنے کی کوشش کرتے ہیں، جو ایک مکمل اور بامقصد زندگی گزارنے کے لیے ضروری ہیں۔  وہ اپنے لیے اعلیٰ معیار قائم کرتے ہیں اور اپنی کمزوریوں اور خامیوں پر قابو پانے کے لیے تندہی سے کام کرتے ہیں، خود کو سنوارنے اور خود پر مہارت حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔
 • دوسروں کی خدمت: تقویٰ کے حامل مومن دوسروں کی خدمت کرنے اور اپنی برادریوں اور بڑے پیمانے پر دنیا میں مثبت تبدیلی لانے کے لیے پرعزم ہیں۔  وہ صدقہ، مہربانی اور سماجی انصاف کے کاموں میں فعال طور پر مشغول رہتے ہیں، جو ضرورت مندوں کی تکالیف کو دور کرنے اور مجموعی طور پر معاشرے کی فلاح و بہبود کو فروغ دینے کی کوشش کرتے ہیں۔  وہ دوسروں کی خدمت کو اللہ سے اپنی وابستگی کی عکاسی اور اس کی رضا اور اجر کمانے کا ذریعہ سمجھتے ہیں۔
 خلاصہ یہ کہ تقویٰ مومنین کو اپنی زندگی کے تمام پہلوؤں بشمول روحانی، اخلاقی، فکری، پیشہ ورانہ، ذاتی اور سماجی جہتوں میں برتری حاصل کرنے کی ترغیب دیتا ہے۔  یہ انہیں تقویٰ، دیانتداری، قابلیت اور خدمت کے اعلیٰ ترین معیاروں کے لیے جدوجہد کرنے کی ترغیب دیتا ہے، یہ تسلیم کرتے ہوئے کہ فضیلت اللہ کی رضا حاصل کرنے اور زندگی میں اپنے مقصد کو پورا کرنے کا ذریعہ ہے۔

©2023 – All Rights Reserved Author of the Books: Sheikh Touqeer Ansari | Design and Manage by Hassan Raza | Book Cover Designed by Asad Aslam

Scroll to Top